محسن جعفری

…تازہ غزل کے کچھ اشعار….

…تازہ غزل کے کچھ اشعار….

بنو گے جب بھی یہاں حق کے ترجماں مرے دوست
تمھارا سر بھی اٹھائیں گے بر سناں مرے دوست

مرے عدو کو غرض ہے تو میرے سر سے ہے
تم اپنی جان گنواؤ نہ رائیگاں مرے دوست

سنا ہے میرے وطن میں کبھی بہار بھی تھی
گلوں کو چومنے آتی تھیں تتلیاں مرے دوست

تمھارے شہر سے ہم اس طرح بھی گزرے تھے
گلے میں طوق تھا پاؤں میں بیڑیاں مرے دوست
(محسن جعفری )

اپنا تبصرہ بھیجیں