Hassan Kazmi

حسن کاظمی

جو کہتے ہیں سب اچھا ہو رہا ہے
انہی سے پوچھئے کیا ہو رہا ہے

تمہاری بات جب سنتا ہوں اکثر
مجھے لگتا ہے جھگڑا ہو رہا ہے

نئی منزل کی جانب سب چلے تھے
سفر اب واپسی کا ہو رہا ہے

خوشی کی بات بس اتنی بہت ہے
کوئی بیمار اچھا ہو رہا ہے

حسن کچھ بھی نہیں تم نے بتایا
مگر چرچا زیادہ ہو رہا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں