پاکستان میں فضائی ٹیکسی سروس کا آغاز 18 جون سے ہوگا

پاکستان میں فضائی ٹیکسی سروس کا آغاز 18 جون سے ہوگا

ائیر ٹیکسی کی سروس حاصل کرنے کے لیے آن لائن ایپلی کیشن چند روز میں دستیاب ہو گی اور 18 جون کو ائیر ٹیکسی سروس کا آغاز کر دیا جائے گا
پاکستان کی پہلی فضائی ٹیکسی سروس کا آغاز 18 جون سے ہو گا۔ اسکائی ونگز کے 2 طیارے کراچی پہنچ گئے۔

کراچی میں افتتاحی تقریب کے بعد پریس کانفرنس کے دوران چیف آپریٹنگ آفیسر اسکائی ونگز عمران اسلم خان کا کہنا تھا کہ ائیر ٹیکسی کی سروس حاصل کرنے کے لیے آن لائن ایپلی کیشن چند روز میں دستیاب ہو گی اور 18 جون کو ائیر ٹیکسی سروس کا آغاز کر دیا جائے گا۔ ایئر ٹیکسی سروس کے ذریعے ملک بھر کے دور افتادہ علاقوں میں ہنگامی بنیادوں پر آمد ورفت ممکن ہو سکے گی۔ ائیر ٹیکسی کی ٹیک آف اور لینڈنگ کے لیے ملک بھر میں 29 ائیر اسٹرپس موجود ہیں جس میں سے 8 کے قریب مکمل طور پر آپریشنل ہیں۔ عمران اسلم نے کہا کہ اس سروس کے تحت ماضی کے مقابلے میں آدھی قیمت پر سروس مہیا کی جائے گی۔ فضائی سروس کی ایپلی کیشن بنانے کے لیے ایک غیر ملکی اور ایک پاکستانی کمپنی سے رجوع کیا گیا تھا۔ یہ انتہائی مسرت کی بات ہے کہ پاکستانی کمپنی کی تیار کردہ ایپلی کیشن کے نتائج عمدہ رہے۔ اب اسی پاکستانی کمپنی کی ایپلی کیشن سروس کے لیے استعمال کی جائے گی۔

سی ای او اسکائی ونگز کیپٹن عاصم نواز کے مطابق بین الاقوامی کمپنیوں کی جانب سے بھی بزنس میں شمولیت کے لیے رابطے کیے جا رہے ہیں۔ سروس ملک کے نو ہوائی اڈوں اور نجی ائیر پورٹس کے علاوہ رحیم یار خان اور بلوچستان کے لیے آپریٹ کی جائے گی۔ کچھ عرصے تک سروس کا دائرہ ملک بھر میں پھیلایا جائے گا۔ آن لائن ٹیکسی سروس کے ذریعے سکیوڑی مسائل سے دوچار بزنس مین اور دیگر افراد بلوچستان سمیت مختلف علاقوں میں سفر کر سکیں گے۔ ان کا مزید کہنا ہے کہ دنیا میں ائیر ٹیکسی کا تصور نہیں ہے، وہاں لوگوں کے پاس اپنے پرائیوٹ جہاز ہوتے ہیں۔ اس حوالے سے ہم کہہ سکتے ہیں کہ یہ پاکستان میں ایک سنگ میل ہے۔ اسکائی ونگز ایوی ایشن کے فضائی بیڑے میں شامل ہونے والے پائیپر اور ڈائمنڈ ساختہ ہوائی جہاز 300 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے اڑنے کی صلاحیت رکھتے ہیں جبکہ دوران پرواز 14 ہزار فٹ کی بلندی پر پرواز کر سکتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں